صفحہ اول / آرکائیو / مرکزی بینک نے محفوظ ڈپازٹس سے متعلق ڈپٹی گورنر کے بیان پر وضاحت جاری کردی

مرکزی بینک نے محفوظ ڈپازٹس سے متعلق ڈپٹی گورنر کے بیان پر وضاحت جاری کردی

اسٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی) کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ پاکستان میں قائم بینکاری نظام مستحکم اور ڈپازٹس محفوظ ہیں، بینکاری نظام میں باکفایت سرمایہ موجود ہے۔

مرکزی بینک نے کہا کہ بینکاری نظام کے منافع میں تقریباً 125فیصد اضافہ ہوا ہے جبکہ اس شعبے میں دھچکے برداشت کرنے کی اہلیت بھی مزید بہتر ہوئی ہے۔

اسٹیٹ بینک کے مطابق ڈپازٹ پروٹیکشن کارپوریشن نے تحفظ میں مزید اضافہ کیا اور ہر ڈپازٹر کو5 لاکھ روپے تک انشورنس کور فراہم کیا، بینک ناکامی یا دیوالیہ ہونے کی صورت میں بیمہ کردہ رقم ڈپازٹرز کو دستیاب ہوتی ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز ڈپٹی گورنر اسٹیٹ بینک نے سینیٹ کی قائمہ کمیٹی میں بریفنگ دیتے ہوئے کہا تھا کہ کوئی بینک دیوالیہ ہوجائے، ڈوب جائے یا ناکام ہوجائے تو جمع کرائی رقم کو تحفظ حاصل نہیں۔

ان کا کہناتھا کہ بینکوں میں صرف 5 لاکھ روپے تک کی رقوم کو قانونی تحفظ حاصل ہے۔

ڈپٹی گورنر اسٹیٹ بینک کا کہنا تھا کہ 5 لاکھ روپے تک کے ڈیپازٹس رکھنے والے کھاتہ داروں کی شرح 94 فیصد ہے جب کہ صرف 6 فیصد اکاؤنٹ ہولڈرز کا بینک بیلنس 5 لاکھ روپے سے زیادہ ہے۔

اپنی بریفنگ میں ڈپٹی گورنر اسٹیٹ بینک نے بتایا تھا کہ 5 لاکھ روپے تک کے اکاؤنٹ ہولڈرز کو ڈیپازٹس پروٹیکشن کارپوریشن کے ذریعے ادائیگی کی جاسکتی ہے، یہ اسٹیٹ بینک کا ذیلی ادارہ ہے جو بینکوں سے ہر سال سبسکرپشن فیس وصول کرتا ہے۔

crossorigin="anonymous">

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے